Wednesday , 13 December 2017
Latest News
بلوچستان میں وسیع البنیاد اتحاد کی تشکیل کیلئے کوششیں تیز

بلوچستان میں وسیع البنیاد اتحاد کی تشکیل کیلئے کوششیں تیز

جے یو آئی،بی این پی مینگل و عوامی اور اے این پی کی اتحاد اسمبلی کے اندر و باہر بلوچستان کے عوام کے مفادات کا دفاع کرے گی۔ اسما عیل بلیدی
تربت(بیورورپورٹ)گوادر پورٹ معاہدہ کی تفصیلات منظرعام پرلائی جائیں اگر یہ ترقی کیلئے ہے تو خوش آمدید کہیں گے اگرسازش ہے تو مخالفت کریں گے‘ بلوچستان میں جے یو آئی‘ بی این پی مینگل‘ بی این پی عوامی اوراے این پی پرمشتمل وسیع البنیاد اتحادکی تشکیل کیلئے کوششیں جاری ہیں یہ اتحاد اسمبلی کے اندر وباہر بلوچستان کے عوام کے مفادات کادفاع کرے گی‘ تربت وزیراعلیٰ کا شہرہونے کے باوجود بجلی کی لوڈشیڈنگ اورانتہائی کم وولٹیج کا شکارہے حالانکہ ہماری کاوشوں سے ایران سے اضافی بجلی معاہدہ کے بعد بجلی کی کمی محض ایک بہانہ اور عوام کو ستانے کا حربہ ہے مگر حکومت اس پر خاموش ہے ان خیالات کااظہار اسما عیل بلیدی  نے بلیدہ کے چار روزہ دورے کے اختتام پر صحافیوں سے ملاقات کے دوران کیا انہوں نے کہاکہ میں نے بلیدہ کاتفصیلی دورہ کیاہے عوام کو جعلی مینڈیٹ سے کوئی توقع نہیں ہے‘ جے یو آئی کے ورکروں‘ ہمدردوں اور حمایتی عوام کے حوصلے بلندہیں اوررمضان المبارک کے بعد پورے حلقہ انتخاب شہرک سے لیکر کولواہ تک کا تفصیلی دورہ کیاجائے گا انہوں نے کہاکہ حکومت انتقامی کاروائیوں پر توانائی ضائع کرنے کے بجائے میرٹ کی حکمرانی پر توجہ دے انہوں نے کہاکہ تربت بلیدہ میں بجلی کی وولٹیج انتہائی کم ہے اور بجلی نہ ہونے کے برابر ہے جس کے باعث تاجر‘ زمینداراور عام صارفین شدید مشکلات کے شکارہیں مگر اس جانب حکومتی ایوانوں میں بیٹھے لوگوں کوفکر نہیں‘ عوام کی تکالیف کا جعلی مینڈیٹ پر آنے والوں کوکوئی احساس نہیں ہے حالانکہ میں نے اپنے سنیٹر شپ کے دوران ایران سے اضافی بجلی معاہدہ کویقینی بنایا اور 70میگاواٹ بجلی سپلائی ہونے کے باوجود مکران کے عوام کو انتہائی کم وولٹیج کے عذاب میں ڈالا جارہاہے جس کے خلاف عنقریب جے یو آئی‘ بی این پی مینگل اوربی این پی عوامی کے اشتراک سے احتجاج کا سلسلہ شروع کرے گی‘ وزیراعلیٰ کو چاہیے کہ وہ اپنے شہرکے لوگوں کی مشکلات پرنوٹس لے‘ انہوں نے کہاکہ مکران میں امن وامان کی حالت دگرگوں ہے حکومت امن وامان کی بحالی پر خصوصی توجہ دے‘ تعلیمی اداروں میں میرٹ کو یقینی بنائے اور صحت کی بہترسہولیات کی فراہمی پرتوجہ دے انہوں نے کہاکہ گوادرپورٹ معاہدہ پر عوام تحفظات کے شکارہیں اس لئے اس کی تفصیلات عوام کے سامنے ظاہرکی جائیں تاکہ معلوم ہوسکے کہ یہ ترقی کیلئے ہے یا سازش ہے۔

Print Friendly, PDF & Email
Too many requestsBolantimes.com