Saturday , 21 October 2017
Latest News
” آئی ایس آئی کس قانون کے تحت کام کرتی ھے ” عاصمہ جھانگیر

” آئی ایس آئی کس قانون کے تحت کام کرتی ھے ” عاصمہ جھانگیر

بولان ٹائیمز : ھیومن رائیٹس ڈفینڈر ، ماھر قانون اورسپریم کورٹ بار کی سابق صدر ، محترمہ عاصمہ جھانگیر صاحبہ نے کھا کہ ” کوئ بتائے کہ پاکستان کی خفیہ ایجنسی آئی ایس آئی کون سی قانون کے تحت کام کرتی ھے “

تفصیلات کے مطابق سابق ماھر قانون ، سپریم کورٹ بار کی سابق صدر عاصمہ جھانگیر نے نیشنل پریس کلب کے تقریب میٹ دی پریس اسلام آباد سے بروز بدھ خطاب کرتے ھوے یہ سوال کیا کہ ” آئی ایس آئی کون سی قانون کے تحت کام کرتی ھے اور اس کا بجٹ اسیمبلی میں پیش کیوں  نھی ھوتا ھے؟ جبکہ اس کی فنڈنگ عام عوام کی پیسوں سے ھوتا ھے “

عاصمہ جھانگیر کا مزید کھنا تھا کہ ” مجھے حالیہ نواز شریف کے فیصلے کہ حوالے سے سپریم کورٹ کے فیصلے سے اسٹیبلشمنٹ کی بُو آرھی ھے ، میں نواز شریف کے ساتھ نھیں بلکہ قانون کے ساتھ ھوں “

ملیٹری کورٹوں کے حوالے سے اپنے بیان میں عاصمہ جھانگیر کا کھنا تھا کہ سیاستدانوں نے ملیٹری کورٹس کی اجازت دہے کر اپنے پائوں پر خود کلھاڑی ماری ھے

عاصمہ جھانگیر نے کھا کہ ” ملک اسٹیبلشمنٹ کے ھاتھوں میں ھے آجکل اسٹیبلشمنٹ میڈیا اور سیاستدانوں ذریعے بات کرتا ھے “

سابق بار کونسل کی صدر عاصمہ جھانگیر نے مطالبہ کیا کہ آرٹیکل 184/3میں ترمیم کر کے آرٹیکل 62/63 کو 1973 کے آئین کے مطابق بنایا جاھے

انھوں نے پاکستان میں قلم اور زبان کی مکمل آزادی کا مطالبہ کیا اور کھا کہ لوگ اب اتنے سادے نھیں کہ ھر بات مان لیں ھمیں آنے والے نسلوں کو اندرونی اور بیرونی جنگھوں سے پاک پاکستان دینا ھوگا

Print Friendly
Too many requestsBolantimes.com